’جس کا کوئی کام نہ ہوپائے ‘‘یہ وظیفہ کرنے والے کو ایسا مشکل کشا مل جاتا ہے کہ پھر اسکی انتھک محنت ضائع نہیں ہوتی

’جس کا کوئی کام نہ ہوپائے ‘‘یہ وظیفہ کرنے والے کو ایسا مشکل کشا مل جاتا ہے کہ پھر اسکی انتھک محنت ضائع نہیں ہوتی
اپنے تئیں بے حد محنت کرنے والے بھی ناکام ہوجاتے ہیںیا ان کے کام اٹک جاتے ہیں۔زیادہ تعلیم کا مسئلہ ہو یا کاروبار کا،کوئی مقدمے بازی ہو یا کسی نیک کام کرنے کئے اٹھایا جانے والا قدم،خود کو اکیلا سمجھ کر دل میں بار بار آنے والا یہ خیال کہ تم اکیلے کیا کرسکتے ہو

اور پھر اس انسان کی ہمت جواب دے جائے۔دشمنوں کو اس پر غلبہ ہو اور وہ اکیلا ان کا مقابلہ نہ کرسکے ۔ایسے بہت سے معاملات میں زچ ہوکر ہمت ہارنے والے کو چاہئے کہ اللہ کو اپنے کام میں وکیل کرلے، اسکی حمدوثنا کرکے اس ذات باری کے فضل و کرم کی التجا کرے تو اس سے بڑا کارساز کوئی اور نہیں ہوسکتا ۔ایسے افراد کو چاہئے کہ وہ روزانہ تین سو تیرہ بار یہ تسبیح کیا کریں ۔

وتوکل علی اللہ وکفی باللہ وکیلا
۔۔
پیر ابو نعمان رضوی فی سبیل للہ روحانی رہ نمائی کرتے اور دینی علوم کی تدریس کرتے ہیں ۔ان سے اس ای میل پررابطہ کیا جاسکتا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں