غریب طلبہ کا کیا حال ہے

ایجوکیشن پالیسی انسٹی ٹیوٹ کی سٹڈی میں خیال ظاہر کیا گیا ہے کہ غریب ترین طلبہ جی سی ایس ای ایس کرتے وقت اپنے امیر ہم جماعتوں سے دو سال پیچھے ہیں۔ یہ بچے سیکنڈری سکول میں اپنے80فیصد وقت کے لئے فری سکول میلز کے حق دار ہیں۔ ایجوکیشن سیکرٹری نے سوشل موبیلٹی ایمرجنسی کی وارننگ دی ہے۔ حال ہی میں ایک تقریر میں جسٹن گریننگ نے اس مسئلے کو اجاگر کیا تھا اور ای پی آئی رپورٹ ’’کلوزنگ دی گیپ‘‘ میں تسلیم کیا گیا ہے کہ تعلیمی نظام میں نسلوں کے لئے بڑا فرق موجود ہے اور حکومتوں نے اس سے نمٹنے کی کوشش کی تھی اور ریسرچ کرنے والوں نے انکشاف کیا ہے کہ فرق گزشتہ عشرے کے دوراں 0.3ماہ سے بڑھ کر24.3ہوگیا ہے بہرحال یہ کم ہو رہا ہے تاہم بہت ہی کم شرح سے کمی آرہی ہے۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ نمایاں سرمایہ کاری اور ٹارگٹڈ انٹرونیشن پروگراموں کے باوجود16 سالہ طلبہ کیلئے فرق 2007اور2016کے درمیان صرف 3ماہ کم ہوا ہے 2016میں قومی فرق سیکنڈری سکول کے اختتام تک19.3اہ تھا درحقیقت غرب طلبہ اپنے امیر ہم جماعتوں سے ہر سال سیکنڈری سکول کے کورس میں تقریباً2ماہ پیچھے ہو جاتے ہیں۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ اگر موجودہ رجحان جاری رہا تو فرق اندازے کے مطابق50سال میں ختم ہوگا، لندن جنوبی انگلینڈ اور مشرق انگلینڈ میں16تا18ماہ ہے جب کہ ایسٹ مڈلینڈز، ہیمبر شمالی انگلینڈ اور جنوب مغربی انگلینڈ میں زیادہ ہے یعنی22ماہ جبکہ آئل آف وائٹ میں یہ29ماہ تک ہے ڈارلنگٹن، ڈربی، لوٹن، سائوتھ ٹائن سائڈ اور تھروک میں بھی زیادہ ہے حالانکہ اس کے خاتمے کے لئے متواتر کوششیں کی گئی ہیں موجودہ حکومت نے تسلیم کرلیا ہے کہ یہ ایک سلگتا ہوا مسئلہ ہے اور جسے دور کرنے کی ضرورت پائی جاتی ہے۔ نیشنل یونین آف ٹیچرز کے اسسٹنٹ جنرل سیکرٹری ایسوس گلمور نے کہا ہے کہ جب تک سرمایہ کاری اور درست مداخلت نہیں کی جاتی فرق کا سلسلہ جاری رہے گا۔ لوکل اتھارٹیز اور سکولوں کو کیش میں قلت کا سامنا ہے جس سے بہت ساری سپورٹ سروسز بند یا کم ہوگئیں، این اے ایس یو ڈبلیوٹی کے جنرل سیکرٹری کرس کیٹس نے کہا ہے کہ فرق کا سبب چائلڈ پاورٹی، غیر محفوظ ہائوسنگ خراب صحت اور ملازمت میں عدم تحفظ ہے حکومت کے کفایت شعاری کے اقدامات بھی اضافے کا ایک سبب ہیں۔ محکمہ تعلیم نے کہا ہے کہ وہ اس سال غریب طلبہ کو آگے بڑھانے کے لئے سکولوں کی مدد کی خاطر پیوپل پریمیم کے ذریعے تقریباً ڈھائی ارب پونڈ ٹارگٹ کر رہی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں